خدمت خلق، صدقہ جاریہ اور ڈونیشن Donation کا بہترین طریقہ

حضور نبی کریمﷺ نے فرمایا کہ: ”اللہ تعالیٰ کے کچھ بندے ایسے ہیں جن کو اس نے اپنی خاص نعمتوں سے نوازا ہے تا کہ وہ اللہ کے بندوں کو اپنے مال سے نفع پہنچائیں اور جب تک وہ اللہ کے بندوں کو نفع پہنچاتے رہیں گے، اللہ تعالیٰ بھی انہیں مزید نعمتوں سے نوازتا رہے گا اور جب وہ خدا کے بندوں کو محروم کر دیں گے تو اللہ بھی ان سے اپنی نعمتیں ختم فرما لیتا ہے اور ان کی جگہ دوسرے بندوں کو عطاء فر ما دیتا ہے“۔ (مشکوٰة شریف )

ترجمہ: اے ایمان والو! نیکی اور پر ہیزگاری (کے کاموں) میں ایک دوسرے سے تعاون و مدد کرو اور گناہ اور برائی (کے کاموں) میں ایک دوسرے کا تعاون نہ کرو۔ (سورۃ المائدہ آیت نمبر 2)

ترجمہ: اگر کوئی شخص راستے سے تکلیف دینے والی چیز ہٹا دے تو یہ بھی صدقہ ہے۔ (صحیح مسلم)

ترجمہ: لوگوں میں سب سے اچھا وہ ہے جو لوگوں کو نفع اور فائدہ پہنچائے۔ (جامع ترمذی)

حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے بہترین انسان بننے کا معیار یہ مقرر کیا ہے کہ ایک انسان دوسرے دوسروں کے لئے فائدہ مند اور نفع آور ہو، دوسروں کے دکھ درد میں شریک ہو اور ان کی خیرو بھلائی کے لئے ہر وقت کوشاں رہے۔

دوسروں کو نفع پہنچانا اسلام کی روح اور ایمان کا تقاضا ہے۔ ایک سچے مسلمان کی یہ نشانی ہے کہ وہ ایسے کام کرے، جس سے عام لوگوں کو زیادہ سے زیادہ فائدہ پہنچے۔مثلاً رفاعی ادارے بنانا، ہسپتال وشفاخانے بنانا، اسکول وکالجز بنانا، کنویں اور تالاب بنانا، دارالامان بنانا وغیرہ۔

یہ ایسے کام ہیں کہ جن سے مخلوقِ خدا فیض یاب ہوتی ہے اور ان اداروں کے قائم کرنے والوں کے حق میں دعائیں کرتی رہتی ہے اور یہ ایسے ادارے ہیں کہ جو صدقہ جاریہ میں شمار ہوتے ہیں یعنی ان اداروں سے جو لوگ فائدہ اٹھاتے ہیں وہ قائم کرنے والے کے حق میں دعا کرتے ہیں اور اس کا اجرو ثواب مرنے کے بعد بھی اس شخص کو ملتا ہے اوراس کے نامہ اعمال میں لکھا جاتا ہے۔

خدمت خلق میں صرف مالی امدادواعانت ہی شامل نہیں بلکہ کسی کی رہنمائی کرنا،کسی کی کفالت کرنا، کسی کو تعلیم دینا، کوئی ہنر سکھانا،اچھا اور مفید مشورہ دینا،کسی کی علمی سرپرستی کرنا،مسجد اور مدرسہ قائم کرنا،نیکیوں کا حکم دینا اور برائیوں سے روکنا ، راستے سے تکلیف دہ چیز ہٹانا وغیرہ یہ تمام امور خدمت خلق میں آتے ہیں ۔

ایزی استاد کی ویب سائیٹ بنانے کی وجہ

ایزی استاد کی ویب سائیٹ بنانے کی بڑی وجہ خدمت خلق تھی۔ کیونکہ کہتے ہیں کہ اچھی تحریر بھی صدقہ جاریہ کی ایک قسم ہوتی ہے۔ اور اللہ تعالیٰ کا لاکھ لاکھ فضل و کرم ہے کہ آج ایزی استاد کی ویب سائیٹ پر ماہانہ پچاس ہزار سے زائد نئے لوگ (وزٹر) آتے ہیں۔ اورماہانہ ایک لاکھ سے زائد آرٹیکلز (پوسٹوں) کو پڑھا جاتا ہے۔ یہ ایزی استاد کے لیے کسی ایوارڈ سے کم نہیں ہے۔

ایزی استاد کی ویب سائیٹ کی تشہیر نہیں کی جاتی بلکہ لوگ خود سرچ انجن(گوگل، یاہو، بینگ وغیرہ)پراپنے مسائل سرچ کر کے ویب سائیٹ پر آتے ہیں۔ اور متعلقہ معلومات سے مستفید ہوتے ہیں۔ اگر اس ویب سائیٹ پر اشتہار لگائے جائیں تو ویب سائیٹ سے ماہانہ بنیادوں پر اچھی خاصی انکم(کمائی ) ہو سکتی ہے۔ تاہم اشتہارات نہ لگانے کی درج ذیل وجوہات ہیں۔

  1. ایزی استاد کی ویب سائیٹ چونکہ خدمت خلق کے جذبے کے تحت بنائی گئی ہے اس لیے اس ویب سائٹ سے کمائی کرنا اچھا نہیں لگتا۔
  2. آج کل انٹرنیٹ پر زیادہ تر فحش اور بے ہودہ قسم کے اشتہارات دکھائے جاتے ہیں۔ اس لیے چند ٹکوں کی خاطر ویب سائیٹ کی بے حرمتی اچھی نہیں لگتی۔
  3. اللہ تعالیٰ کی ذات دس گنا سے لے کر سات سو گنا تک منافع دیتی ہے۔ اس لیے ویب سائیٹ سے پیسے کمانے کے بجائے اسے خالص خدمت خلق کے لیے بنایا گیا ہے۔

ایزی استاد کے مسائل اور ان کا حل

تاہم ویب سائیٹ کو روزانہ کی بنیادوں پر چلانے کے لیے اچھا خاصا وقت اور رقم درکار ہوتی ہے۔ اس کے علاوہ ویب سائیٹ کی ہوسٹنگ، ڈومین کی خریداری اور انٹرنیٹ کنکشن اور دیگر لوازمات کے لیے بھی رقم کی ضرورت ہوتی ہے۔ اس لیے فیصلہ کیا گیا ہے کہ اس صدقہ جاریہ اور خدمت خلق کے کام میں مزید لوگوں کو بھی شامل کیا جائے۔تاکہ اُن کے مشوروں، رہنمائی اور مالی معاونت سے اس کام کو بہتر سے بہترین بنایا جا سکے۔

نیکی کے اس عظیم خدمت خلق کے صدقہ جاریہ مشن میں آپ بھی شامل ہو سکتے ہیں۔ جس کے مندرجہ ذیل تین طریقے ہیں۔

  1. ویب سائیٹ کو مزید ترقی دینے اور جاری رکھنے کے لیے ہمیں آپ کی آراء، مشوروں اور رہنمائی کی ضرورت ہے۔
  2. ویب سائیٹ کے اخراجات پورے کرنے کے لیے ہمیں آپ سے ڈونیشن (عطیہ جات) کی بھی ضرورت ہے۔ یاد رکھیے۔مالی معاونت خدمت خلق کی غرض سے صرف ڈونیشن (عطیہ) کی صورت میں ہو سکتی ہے۔ فطرانے اور زکوۃ کی رقم کسی طور پر بھی قابل قبول نہ ہو گی۔
  3. اچھی تحریربھی صدقہ جاریہ کی ایک قسم ہوتی ہے۔ جب تک لوگ اس سے فائدہ اٹھاتے ہیں،لکھنے والے کو اس کا اجر و ثواب ملتا رہتا ہے۔ اس لیے آپ بھی اپنی خود کی کوئی تحریر لکھ کر ہمیں بھیج سکتے ہیں۔ جسے آپ کے نام کے ساتھ شائع کر دیا جائے گا۔

خدمت خلق وقت کی ضرورت بھی ہے اور بہت بڑی عبادت بھی ہے۔ دوسروں کے کام آنا ہی اصل زندگی ہے، اپنے لئے تو سب جیتے ہیں، کامل انسان تو وہ ہے ،جو اللہ کے بندوں اور اپنے بھائیوں کے لئے جیتا ہو۔ علامہ اقبال کے الفاظ میں:

ہیں لوگ وہی جہاں میں اچھے
آتے ہیں جو کام دوسروں کے

خدمت خلق کتنی بڑی نیکی اور کتنا افضل عمل ہے اور قرآن و حدیث کی روشنی میں اس کا کیا مقام و مرتبہ ہے، یہ ایک نہایت ہی اہم اور عظیم الشان موضوع ہے، جس پر علمی اعتبار سے علماء نے سیکڑوں کتابیں لکھی ہیں ۔قرآنی آیات، احادیثِ پاک اور فقہی تصنیفات کے زیادہ تر حصوں کا تعلق انسانوں کے باہمی معاملات سے ہے اور ان سب کا مرکز و محور خدمت خلق ہی ہے۔


ڈونیشن (Donation) بھیجنے کا طریقہ کار


Bank Name: Allied Bank Limited – ABL
Branch Name: Sector F/3 Mirpur
Account Title: Ansar Ali
Account Number: 10028802300020
IBAN Number: PK75 ABPA 0010 0288 0230 0020


نوٹ: ایزی استاد کی تمام تحریریں رومن اردو میں بھی دستیاب ہیں

اگر آپ کو یہ تحریر اچھی لگی ہے۔ یا آپ اس تحریر سے متعلقہ مزید معلومات حاصل کرنا چاہتے ہیں تو آپ ہمیں کمنٹس کر سکتے ہیں۔ آپ کے ہر سوال ہر کمنٹس کا جواب دیا جائے گا۔ شکریہ

اپنی رائے کا اظہار کریں