اصلی اور خالص شہد کی پہچان کے گیارہ مفید طریقے

شہد، دودھ اور گھی تین ایسی چیزیں ہیں کہ جن کو جب تک اپنی آنکھوں کے سامنے حاصل نہ کیا جائے ان کے خالص ہونے پر اعتبار نہیں کیا جا سکتا،کیونکہ ہمارے ملک میں جتنا شہد مکھیوں سے حاصل ہوتا ہے ۔ اس سے کہیں زیادہ مارکیٹوں میں فروخت ہوتا ہے اور یہ سب کا سب مصنوعی اور جعلی ہوتا ہے۔

اصلی اور خالص شہد حاصل کرنے کاسب سے زیادہ قابل اعتماد طریقہ یہ ہے کہ شہد کی مکھیوں کا چھتا تلاش کیا جائے،اور تھوڑی سے ہمت کا مظاہرہ کرتے ہوئے خالص شہد حاصل کر لیا جائے۔ لیکن یہ کام اتنا خطرناک ہے کہ عام شخص اس کا تصور ہی نہیں کر سکتا، کیونکہ شہدکی مکھیاں اتنی زہریلی ہوتی ہیں کہ ان کے کاٹنے سے موت بھی واقع ہو سکتی ہے۔

ایزی استاد میں آج ہم آپ کو بتائیں گے کہ کیسے آپ اصلی (خالص)اور جعلی(نقلی) شہد کی پہچان کر سکتے ہیں۔ کیسے آپ کو پتا چلے گا کہ اصلی اور خالص شہد کون سا ہے۔

1 شہد کو پانی میں حل کریں

اصلی اور خالص شہد کی پہچان کا سب سے آسان اور آزمودہ طریقہ یہ ہے کہ شہد کو پانی میں حل کر کے دیکھا جائے۔ایک گلاس میں پانی لے کر شہد سے بھرا چمچ اس میں ڈال دیں، اگر شہد خالص ہوا تو یہ پانی میں حل نہیں ہوگا، اگر خالص نہ ہوا تو حل ہو جائے گا، کیوں کہ مارکیٹ میں دستیاب اکثر شہد گڑ سے بنائے جا رہے ہیں۔ اور گڑ پانی میں حل ہو جاتا ہے۔

خالص شہد پانی میں آسانی سے حل نہیں ہوتا ۔اس لیے خالص شہد کی پہچان کے لئےایک پیالے میں پانی ڈالیں اور اوپر سے شہد قطرے قطرے کی شکل میں پانی کے پیالہ میں ٹپکایا جائے۔اگر تو یہ قطرے ثابت و سالم پیندے تک چلے جاتے ہیں ۔تو اس کا مطلب ہے کہ شہد اصلی ہے اور ا س کے برعکس شربت یا شیرہ کا قطرہ پیندے تک جانے سے پہلے ہی ٹوٹ جاتا ہے تو اس کا مطلب ہے کہ شہد خالص نہیں ہے۔

2 شہد کو آگ لگا کر دیکھیں

شہد کے اصلی اور خالص ہونے کی پہچان کرنے کے لئے آپ کو ایک عدد لائٹر اور موم بتی درکار ہو گی۔ اس طریقہ کے ذریعے شہد کی جانچ کے لئےموم بتی میں موجود کاٹن کی بتی کو شہد میں بھگو کر ایک بار جھٹک دیں اور بعدازاں لائٹر سے اسے آگ لگانے کی کوشش کریں۔ اگر شہد اصلی ہواتو کاٹن کی بتی، پٹرول یا سرسوں کے تیل کی طرح جل جائے گی۔ لیکن اگر شہد نقلی ہو اتو شیرہ کی طرح دھواں چھوڑ کر اور بو پیدا کر کے کوئلہ چھوڑ کر جلےگی۔

3 شہد کا گاڑھا پن

خالص شہد کی پہچان کا سب سے آسان طریقہ ہے کہ شہد کا گاڑھا پن دیکھا جائے کیونکہ اصلی اور خالص شہد عموماً گاڑھا ہوتا ہے۔ اس کو دیکھنے کے لیے شہد کو ایک چمچے میں بھریں اور اسے کسی برتن میں خالی کرنے کی کوش کریں۔اگر یہ آہستگی سے چمچ سے نیچے گرے تو قوی امکان ہے کہ یہ اصلی ہے۔ جعلی شہد مائع کی صورت میں تیزی سے چمچے سے بہنے لگے گا۔

یہ بھی پڑھیے: میٹھے اور لال تربوز کی پہچان کے پانچ قدرتی طریقے

شہد کا گاڑھا پن چیک کرنے کا دوسرا طریقہ یہ ہے کہ شہد کے ڈبے میں کیل کی مدد سے سوراخ کرکے شہد کو ایک طشتری میں الٹا دیا جائے تو اصل شہد سوراخ سے آہستہ آہستہ اور سانپ جیسی کنڈلی (بل کھا کر ) کی شکل میں جمع ہوگا،مگر نقلی شہدمیں یہ بات نہ ہوگی۔

4 شہد کو ڈبل روٹی پر لگائیں

شہد کو ڈبل روٹی پر لگائیں۔ اگر ڈبل روٹی سخت رہے تو اس کا مطلب ہے کہ شہد خالص ہے۔ اگر ڈبل روٹی نرم ہو کر شہد میں بھیگنے لگے تو اس کا مطلب ہے کہ یہ شہد چینی سے بنایا گیا ہے۔

5 شہد کو فریج میں رکھیں

اصلی اور خالص شہد فریج میں رکھنے کی صورت میں جم جاتا ہے اور مزید گاڑھا ہوجاتا ہے تا وقتیکہ اسے فریج سے باہر رکھ کر معمول کے درجہ حرارت پر نہ لایا جائے۔ نقلی شہد فریج میں رہنے کے باوجو جوں کا توں مائع حالت میں برقرار رہتا ہے۔

6 کاغذ کا استعمال

شہد کے چند قطرے جذب کرنے والے کاغذ پر پر ٹپکا دیں، اگر یہ کاغذ قطروں کو جذب کرگیا تو اس کا مطلب ہے کہ یہ شہد خالص نہیں ہے۔کیونکہ خالص شہد کاغذ کی سطح پر موجود رہتا ہے۔ اگر آپ کے پاس جذب کرنے والا کاغذ نہیں ہے تو اس کے لئے آپ سفید کپڑا بھی استعمال کر سکتے، اس کپڑے پر شہد کے چند قطرے گرا کر تھوڑی دیر بعد کپٹرے کو دھو لیں اگر تو کپڑے پر دھبے کا نشان رہ جاتا ہے تو اس کا مطلب ہے کہ شہد خالص نہیں ہے۔

یہ بھی پڑھیے: شہد کے حیرت انگیر فوائد کی مکمل تفصیل

شہد کی پہچان کا ایک طریقہ یہ بھی ہے کہ ترچھے کاغذ یا کپڑے پر اگر شہد کا قطرہ گرایا جائے اور شہد کا موتی کپڑے پر لگے بغیر آگے پھسل جائے تو شہد اصلی ہے۔

7 شہد کو دیکھ کراور سونگھ کر چیک کرنا

قدرتی شہد نقلی شہد کی بہ نسبت زیادہ پتلا اور دھندلا ہوتا ہے اور پولن کے ذرات شہد کی سطح پر نظر آتے ہیں۔ہر شہد کی اپنی الگ خوشبو ہوتی ہے جو پھولوں کی بھینی بھینی مہک سے مہک رہا ہوتا ہے، جب کہ شیرے اور گلوکوز سے تیارشدہ شہد سونگھنے پر صاف پتہ چل جاتا ہے کہ یہ شیرہ ہے۔

8 شہد کا پتلا ہو جانا

قدرتی شہد میں ایک خاص طرح کا سسٹم ہوتا ہے جسے اوسموٹک پریشر کہا جاتا ہے۔ اس پریشر کے تحت شہد ہوا میں موجود نمی کو جذب کر لیتا ہے۔ ایک کھلے منہ کی بوتل میں تقریباً پچیس گرام (۲ چمچ) شہد رکھ کر چند دنوں کے لیے چھوڑ دیں، اگر شہد اصلی ہوا تو پتلا ہو جائے گا اور نقلی ہو تو سطح پر خشک ہو جائے گا اور ایک باریک جھلی سطح پر آجائے گی۔

9 شہد کو چکھ کر چیک کرنا:

ہر علاقہ کا شہد اپنا ایک مخصوص ذائقہ رکھتا ہے، کبھی بھی ایک علاقے کا شہد دوسرے علاقے کے شہد جیسا نہیں ہوگا چاہے کسی ایک مخصوص پھول کے باغات سے حاصل شدہ ہی کیوں نہ ہو۔ مثلاً اجوائن ، مالٹے اور سرسوں کا شہد یاد رکھیں۔ شہد کا ذائقہ موسمی درختوں، پھلوں، پھولوں علاقوں کے حساب سے تبدیل ہوتا رہتا ہے۔

یہ بھی پڑھیے: شہد کے ذریعے علاج

اگر کسی کمپنی کا شہد ہمیشہ ایک جیسی رنگت، خوشبو اور ذائقہ والا ہو تو سمجھ لیں کہ یہ قدرتی نہیں ہے بلکہ فارمولے کے تحت شدہ ہے۔ یاد رکھیں کہ شہد کی مکھی کو جس موسم کے پھولوں کا رس یعنی غذا ملے گی ویسے ہی اس کا ذائقہ ہو گا۔

10 نمک کےذریعے

اصلی اور خالص شہد کی پہچان یہ ہوتی ہے کہ اس میں نمک کی ڈلی حل نہیں ہوتی،نمک کی ڈلی لے کر شہد میں گھمائیں۔ آپ جتنی دیر چاہے نمک حل کر لیں شہد میں نمک کا ذائقہ نہیں آئے گا۔اگرنمک کی ڈلی گھمانے کے بعد شہد میں نمک کا ذائقہ محسوس ہو تو اس کا مطلب ہے کہ شہد نقلی ہے۔

11 بجھے ہوئے چونے کا استعمال

ان بجھے چونے کی ایک چھوٹی سی ڈلی لے کر اسے تھوڑے سے شہد میں ڈبو دیں۔ اگر چونا ویسے ہی پڑا رہے تواس کا مطلب ہے کہ شہداصلی اور خالص ہے۔لیکن اگر اس میں سے چڑ چڑ کی آواز آئے یا دھواں نکلے تو ایسا شہد خالص نہیں ہے۔

خالص شہد کی پہچان کے دیگر طریقے:

متذکرہ بالا طریقوں کے علاوہ بھی خالص شہد کو چیک کرنے کے بہت سے طریقے ہیں، جن میں سے کچھ تو انتہائی خطرناک ہیں اور کچھ بہت مشکوک، اس لیے آپ اوپر بیان کردہ طریقوں سے ہی خالص شہد کی پہچان کر لیجیے، تاہم معلومات کی غرض سے بقیہ طریقے بھی تحریر کیے جا رہے ہیں۔ لیکن ان

  • شہد کے خالص ہونے کی ایک پہچان یہ بھی ہے کہ ذیابیطس کے مریضوں کو خالص شہد استعمال کرائیں تو ان کی شوگر نہیں بڑھتی۔شہد کھانے سے اگر شوگر بڑھ جائے تو وہ شہد نقلی ہو گا۔
  • عام گھریلو مکھی کو زندہ پکڑ کر پھرتی سے شہد میں آدھے یا پون انچ تک ڈبو کر نکالا جائے ۔ اگر تو مکھی اڑ جائے تو اس کا مطلب ہے کہ شہد اصلی اور خالص ہے، کیونکہ نقلی اور جعلی شہد ہونے کی صورت میں شیرہ وغیرہ مکھی کے پر اور جسم سے لپٹ جاتا ہے جس سے مکھی اڑ نہیں سکتی۔
  • شہد کو شیشے کے برتن میں ہم وزن میتھی لئیڈ سپرٹ میں خوب ہلائیے یا ملائیں اگر شہد نیچے بیٹھ جائے تو خالص ہوگا۔ ورنہ اس محلول کا رنگ دودھیا ہو جائے گا۔ اس کا مطلب ہے کہ شہد نقلی ہے۔
  • روٹی کے ٹکڑے پر اچھی طرح شہد ڈال کر کسی بھوکے کتے کے آگے ڈال دیں۔ اگر شہد خالص ہوا تو کتا بھوکا ہونے کے باوجود روٹی نہیں کھائے گا۔ جبکہ اگر شہد نقلی ہوا تو کتا بخوشی اس کو کھا جائے گا۔
  • تھوڑا سا شہد ہاتھ کی پشت پر لگا کر اس پر چونا ملیں اگر ہاتھ میں سے گرمی سی نکلے تو شہد اصلی ہے۔بصورت دیگر شہد نقلی ہے۔
  • شہد کو کاغذ پر لگا کر پنسل سے لکیریں لگائیں۔ اگر شہد نہ پھیلے تویہ اصلی ہے۔
  • شہد میں چونا ڈال دیاجائے اور اگر چونا نہ پھولے تو یہ اصلی ہے۔اور اگر چونا پھیل جائے تو شہد نقلی ہے۔
  • لہسن کی گٹھلی کو تھوڑی دیر کے لئے شہد میں ڈالیں، اگر نکالنے کے بعد لہسن کی بو مر جائے تو سمجھیں شہد اصلی ہے۔
  • معدے میں زخم والا مریض اگر شہد کھانے کے بعد قے کر دے تو یہ شہد کے اصل ہونے کی علامت ہوتی ہے۔اور اسی طرح انتڑیوں میں زخم والے مریض کو اگر خالص شہد کھلائے جائے تو اسے درد ہو گا۔

خالص شہد کی پہچان کے حوالہ سے اگر کوئی چیز آپ کی سمجھ میں نہیں آئی ہے یا آپ اس تحریر کے حوالہ سے مزید معلومات حاصل کرنا چاہتے ہیں تو آپ ہمیں کمنٹس کر سکتے ہیں۔ آپ کے ہر سوال،ہر کمنٹس کا جواب دیا جائے گا۔

اگر آپ کو یہ تحریر اچھی لگی ہے تو آپ اسے سوشل میڈیا پر شیئر کر سکتے ہیں۔ تاکہ آپ کے دوست احباب کی بھی بہتر طور پر راہنمائی ہو سکے۔

3 comments

  1. بہت اچھی انفارمیشن شیئر کی ہے۔ واقعی آج کے زمانے میں اصلی شہد ملتا ہی نہیں ہے اگر ملے تو اس کی پہچان مشکل ہو جاتی ہے۔

    1. اصلی شہد کا ذائقہ کبھی بھی کڑوا نہیں ہوتا، البتہ موسم کے اثرات، آب و ہوا اور گرد و غبار کی وجہ سے بعض اوقات ذائقے میں تھوڑی بہت تبدیلی آ سکتی ہے

اپنی رائے کا اظہار کریں