منہ کی بدبو سے نجات کے طریقے | سانس کی بدبو کا علاج

جس انسان کے منہ سے بدبو آرہی ہو، کوئی اس کے قریب آنا پسند نہیں کرتا۔ منہ اور سانسوں کی بدبو انسان کے لیے خاصی شرمندگی کا باعث ہوتی ہے۔ اس سے نہ صرف سماجی و معاشرتی روابط بلکہ ازدواجی زندگی بھی متاثر ہوتی ہے۔ آپ کے منہ سے نکلنے والے الفاظ تو خوبصورت ہوتے ہیں کہ انہیں سننے کو دل چاہتا ہے ۔ لیکن آپ کے منہ کے بدبو آپ کو لوگوں سے دور کر دیتی ہے۔

منہ سے بدبو آنا ایک ایساخطرناک مسئلہ ہےکہ جس کی وجہ سےآپ کے بے تکلف دوست بھی آپ کو بے عزت کرسکتے ہیں ۔بعض اوقات جو شخص اس مسئلے کا شکار ہوتا ہے اس کا علم ہی نہیں ہوتا ، اسے خود پتا ہی نہیں ہوتا کہ اس کے منہ سے کتنی بدبوآتی ہے اور جسے پتا ہوتا ہے اس کی زندگی کا سکون غارت ہو جاتا ہے۔

منہ کی بدبو سے نجات کے سادہ اور آسان طریقے ٹوٹکے

ایسی خواتین جن کے منہ یا سانس سے بدبوآتی ہے انہیں مردوں کے مقابلے میں زیادہ پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے کیونکہ سانس سے بدبو آنا خواتین کی شخصیت کو بہت زیادہ متاثر کرتا ہے۔ایسی خواتین کو اس بات کا اندازہ اس وقت ہوتا ہے جب ان کی کوئی سہیلی انہیں اس بات سے آگاہ کرتی ہے کہ اُس کے سانس کی بدبو کے باعث وہ اس کے ساتھ مزید بات نہیں کرسکتی ۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ دس میں سے آٹھ لوگ ایسے ہوتے ہیں جن کے منہ یا سانس سے زندگی کے کسی نہ کسی مرحلے میں بو آتی ہے۔ اور ہرپانچ میں سے ایک شخص ایسا ہوتا ہے کہ جس کے منہ کی بدبو مستقل اور دائمی ہوتی ہے اور کبھی ختم نہیں ہوتی۔حالانکہ ایسی بدبو کو بھی ختم کیا جا سکتا ہے لیکن ہوتا یہ ہے کہ اسے سرے سے ختم کرنے کے بجائے زیادہ توجہ وقتی علاج کی طرف دی جاتی ہے۔

یہ بھی پڑھیے: بغلوں کی بدبو سے چھٹکارہ پانے کے آسان طریقے

منہ کی بدبو کا تو ہمیں پتا چلا جاتا ہے لیکن سانس کی بدبوایک ایسا مسئلہ ہے کہ جس کا پتہ مشکل سےہی چلتا ہے۔ یہ جاننے کا سب سے اچھا طریقہ یہی ہے کہ ان لوگوں میں سے کسی سے پوچھا جائے جو ہم سے بہت نزدیک ہوتے ہیں۔ مثال کے طور پر شریک حیات یادوست احباب وغیرہ، اور اگروہ اس بات کی تصدیق کر دیں تو فوراً سے پہلے بدبو کے خاتمے کے اقدامات کرنے چاہیں۔

آپ کی بدبودار سانس آپ کو لوگوں میں اٹھنے بیٹھنے کے قابل نہیں چھوڑتی۔سانس کی بدبو آپ کے دانتوں کی خراب صحت یا آپ کی خرابی صحت کی طرف اشارہ کرتی ہے۔یہ بدبودار سانس اس بات کی طرف اشارہ کرتی ہے کہ یا تو آپ جو غذا کھا رہے ہیں وہ خراب ہے یا پھر آپ نے جو لائف اسٹائل اختیار کیا ہے وہ غیر صحت بخش ہے۔

منہ کی بدبو کا خاتمہ کیسے کیا جائے بدبو سےنجات کیسے حاصل کی جائے

یوں تو بازار میں کئی قسم کے ماؤتھ واش دستیاب ہیں لیکن ان کے استعمال سے عارضی طور پر منہ اور سانس کی بدبو سے چھٹکارا ملتا ہے ۔اگر اسے مسئلے کو مستقل بنیادوں پر حل کرنا ہوتو پھر آپ کو ہماری تحریر مکمل پڑھنی ہو گی۔

آپ کے منہ سے بدبو آتی ہے یا کہ نہیں ، یہ چیک کرنے کا سب سبے آسان طریقہ یہ ہے کہ اپنی کلائی کا پچھلا حصہ اپنی زبان سے چاٹیں، اور اس کے خشک ہونے کے بعد اس کو سونگھ کر دیکھیں آپ کو بدبو کا اندازہ ہو جائے گا، یہی عمل ایک دن میں تین سے چار بار دہرا کر آپ معلوم کر سکتے ہیں کہ آپ کے منہ کی بدبو کس درجے کی ہے۔

بدبو کی وجوہات

منہ کی بدبو، منہ میں موجود بیکٹریا اور گندگی کے باعث پیدا ہوتی ہے۔ بدبو پیدا کرنے والے بیکٹریا آکسیجن کے بغیر ہی پروان چڑھتے ہیں۔ جن کی وجہ سے منہ کے اندر گندہ مواد بننا شروع ہو جاتا ہے جو کہ سفید رنگ کی ایک تہہ کی صورت میں دانتوں ، زبان اور مسوڑھوں پر جمنے لگتا ہے جو کہ بدبو پیدا کرنے کا باعث بنتا ہے۔

منہ سے بدبو کی وجہ عارضی یا مستقل ہو سکتی ہے۔عارضی بد بو کھانوں کی وجہ سے ہوتی ہے۔ مثلاًپیاز اور لہسن وغیرہ کے کھانے سے منہ سے وقتی طور پر بدبو آتی ہے جس کی وجہ یہ ہے کہ جب یہ خوارک خون میں ملتی ہے تو پھیپھڑوں سے سانس خارج ہونے کے بعد منہ سے بو آتی ہے۔

منہ کی مستقل بو کی وجہ زبان کے اوپر بیکٹیریا کا اکٹھا ہونا ہے ۔یہ بیکٹیریا اس وقت مزید پھلتے پھولتے ہیں جب ہمارا منہ خشک ہوتا ہے۔بیکٹریا سے نجات کا بہترین ذریعہ اپنے دانتوں کی مکمل صفائی ہوتی ہے۔

منہ سے بدبو آنے کئی وجوہات ہوتی ہیں۔ جن میں مضر صحت غذاؤں کا استعمال ، کھانے پینے میں بے قاعدگی، الکوحل اور سگریٹ نوشی کا بکثرت استعمال، جسم میں پانی کی کمی، مسوڑھوں کا سوجنا، دانتوں میں خلا پیدا ہوجانا، مسوڑھوں میں پیپ پڑجانا، گلے کا انفیکشن، سانس کا مسئلہ، آنتوں میں کیڑے، قبض اورمعدے سے متعلقہ دوسری بیماریاں شامل ہیں۔

ڈاکٹروں کے مطابق سانس کی بدبو کی تین وجوہات ہوتی ہے ایک تویہ کہ منہ کی صفائی کا صحیح طور پر خیال نہ رکھا جائے دوسرے مسوڑوں کی کوئی بیماری لاحق ہو تیسرے جسے گیسٹرک کی شکایت رہتی ہو

منہ اور سانسوں کی بدبو کی درج ذیل وجوہات بھی ہوتی ہیں۔

  • اگر دانتوں میں صحیح طور پر برش نہ کیا جائے اور دانتوں میں کھانا لگا رہ جائے اور اس کی صفائی ستھرائی کا خیال نہ رکھیں تو یہ کھانے کے ذرات منہ میں جراثیم اور بدبو کا سبب بن جاتے ہیں ۔
  • دانتوں اور مسوڑھوں کی بیماریاں بھی منہ میں جراثیم کا سبب بن جاتی ہیں ، یہ جراثیم دانتوں کے اردگرد اپنی آماجگاہ بنالیتے ہیں جس کی وجہ سے منہ میں سوجن یا زخم یا چھالے پیدا ہو جاتے ہیں ، ان سے بھی بو پیدا ہو جاتی ہے۔
  • پنیر اور دوسری ڈیری مصنوعات میں بہت زیادہ پروٹین پائی جاتی ہے جو کہ بیکٹریا کی پیداوار کی نشاندہی کرتی ہے مختلف کھائی ہوئی چیزوں کے ذرات منہ میں اکٹھے ہو کر گندے مواد کی صورت بن جاتے ہیں۔
  • سانس میں بدبو کی وجہ گلے کا انفیکشن، ناک کا انفیکشن، پھیپھڑوں کا انفیکشن، گلے کے غدود کا انفیکشن، بخار، نزلہ ، ہرا اور پیلا بلغم اور بلغمی کھانسی ہوتی ہے۔
  • منہ کی گندگی ، بدبو کو پیدا کرنے میں چینی بھی اہم کردار ادا کرتی ہے۔ چینی بھی بیکٹریا کی افزائش میں خوراک کا کام کرتی ہے جو کہ آپ کے دانتوں کے ٹوٹنے کے عمل کی ابتدائی شکل ہوتی ہے۔
  • پیاز، لہسن ، کافی، سگریٹ نوشی، اور تمباکو کھانے والوں کے منہ سے بدبو آنا عام بات ہے۔علاوہ ازیں کافی اور چائے کے استعمال سے نہ صرف دانت خراب ہوتے ہیں بلکہ اس سے منہ سے بھی بو آتی ہے۔
  • ذیابیطس، جگرکی خرابی، گردوں کی خرابی، پھیپھڑوں کی خرابی ، یا سائنوس پرابلم بھی یہ بدبو پیدا کر سکتی ہیں۔علاوہ ازیں نظامِ انہظام کی خرابی سے بھی منہ اور سانس کی بدبو پیدا ہو سکتی ہے۔
  • اگر بدہضمی بڑھ جائے یا بہت دیر تک بلاجواز معدہ خالی رہے تب بھی سانس ناخوشگوار اور منہ میں بدبو پیدا ہو سکتی ہے۔

بدبو کا قدرتی علاج

منہ کی بدبو دور کرنے کے لیے ضروری ہے کہ آپ کو پتہ ہونا چاہیے کہ آپ کی سانس بھی اتنی ہی خوبصورت ہے جتنی کہ آپ کے لفظ اور آپ کی باتیں۔ اس کے لیے آپ کو اپنے دانتوں، مسوڑھوں اور زبان کی اچھے سے صفائی کرنا ہو گی۔

  1. پانی کا استعمال

منہ کی خشکی جراثیم کی نشونما کے لئے ساز گار ہوتی ہے ۔ بدبو کے خالق بیشتر جراثیم خشک ماحول میں پلتے بڑھتے ہیں۔ لہٰذاپانی پینے سے منہ میں پھنسے غذائی ذرات اور جراثیم نکل جاتے ہیں۔ اگر آپ کا منہ خشک ہوجائے آپ کو چاہیے کہ پانی کا وافر استعمال کریں ، پانی زیادہ پینے سے تھوک زیادہ بنتا ہے اور منہ خشک نہیں رہتا۔ منہ خشک رہے گا توبد بو بڑھ جائے گی۔

ہائیڈریشن (آبیدگی) منہ کی بو کا ایک اہم علاج ہے، کیوں کہ آپ کا جسم جب ڈی ہائیڈریٹڈ (پانی کی کمی) ہوتا ہے، تو منہ میں تھوک پیدا کرنے کی صلاحیت کم ہو جاتی ہے اور یہی کمی منہ میں بدبو پیدا کرنے کا باعث بنتی ہے۔اس لیے پانی کے زیادہ استعمال کے ساتھ ساتھ پانی میں نمک ڈال کر غرارے بھی کریں۔

یہ بھی پڑھیے: پاؤں کی بدبو سے نجات کے آسان طریقے

پانی کثرت سے استعمال کریں کیونکہ یہ منہ میں موجود غذائی ذرات کو بہالے جاتا ہے ۔لعاب دہن کو تحریک دیتا ہے۔جراثیم کی افزائش کے لئے ساز گارماحول کے خاتمہ میں مددگار ہوتا ہے ۔ پانی آپ کے منہ میں نہ صرف تازگی کا احساس دلاتا ہے بلکہ ناخوشگوار بدبو سے بھی نجات دلاتا ہے۔

ہرکھانے کے بعد ماوتھ واش سے غرغرے کرناممکن نہ ہوتو پانی سے غرغررے کریں۔اس سے غذا کے اثرات دھوڈالنے میں مدد ملتی ہے جو میں کچھ حدتک غذا کی بوآتی ہے۔

  1. دن میں دو بار برش کرنا

منہ کی صفائی کے ضمن میں سب سے ضروری بات کم ازکم دو وقت یعنی صبح اور رات کو سوتے وقت تین منٹ کے لیے دانتوں کو ہر زادئیے سے برش کرنا چاہیے ۔دانتوں کے ساتھ ساتھ اگر زبان کو بھی برش سے صاف کر لیا جائے تو بہتر ہے کیونکہ دانتوں کے ریخوں کے ساتھ ساتھ بیکٹریا زبان کی سطح پر بھی گھر بناتے ہیں ۔

دانتوں کو صرف اچھی طرح برش کرنا کافی نہیں ہوتا، زبان کی صفائی بھی ضروری ہوتی ہے۔دانت برش کرتے وقت برش کی پشت سے زبان ضرور صاف کریں۔ دیکھنے میں آیا ہے کہ لوگوں کی اکثریت بہت تیزی سے دانت برش کرتی ہے جس کادورانیہ ایک منٹ یااس سے بھی کم ہوتا ہے۔

ماہردندان کاکہنا ہے کہ دانتوں کو ہرزاویے سے کم ازکم تین منٹ برش کرنا چاہیے۔ماوتھ واش کا استعمال اس وجہ سے مفید ہوتاہے کہ اس سے بیکٹریا کو ہلاک کرنے اور دانتوں پر میل کے خاتمے میں مدد ملتی ہے۔

  1. پھل استعمال کریں

پھلوں کا استعمال کریں۔ کیونکہ ترش یا تیزابی خصوصیات کے حامل پھل بدبو دار سانس کو ختم کرنے میں مدد دیتے ہیں،

ان پھلوں میں شامل قدرتی ایسڈ منہ میں موجود لعاب کی پیداوار کو سرگرم کرتاہے اور سانس کو تروتازہ رکھنے کے ساتھ ساتھ مردہ سڑے ہوئے خلیوں کو بھی باہر نکال دیتے ہیں جومنہ میں بدبو پیدا کرنے کا سبب بنتے ہیں۔

مالٹا، مسمی، لیموں سمیت ترش پھل وٹامن سی سے بھرپور ہوتے ہیں اور وٹامن سی منہ کو تازہ رکھتے ہوئے اس میں بدبو پیدا نہیں ہونے دیتا۔علاوہ ازیں آپ کو چاہیے کہ چبانے والے پھل کھائیں کہ اس طرح نہ صرف منہ کی ورزش ہوگی بلکہ دانت بھی صاف رہیں گے۔گاجر، سیب، امرود، ناشپاتی وغیرہ کا استعمال کریں۔

  1. دہی کا استعمال

اگر آپ کے منہ سے بدبو آتی ہے تو دہی کا استعمال کریں کیونکہ دہی کا باقاعدہ استعمال منہ اور سانس کو تروتازہ اورخوشگوار رکھتا ہے۔ روزانہ ایک پاؤ دہی کا استعمال منہ میں بدبو پیدا کرنے والے کمپاؤنڈ ہائیڈروجن سلفائیڈ کے لیول کو کم کردیتا ہے ۔کچھ ہفتے تک دہی کا باقاعدہ استعمال منہ کی بدبو کو مکمل طورپر ختم کردیتا ہے۔

بعض ادویات ایسی ہوتی یں جن کے استعمال سے منہ سے بو آنا شروع ہوجاتی ہے۔اگر آپ کو کبھی ادویات استعمال کرنے کی وجہ سے ایسا ہو تو دہی کا استعمال کریں، کیونکہ تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ دہی کھانے سے منہ میں موجود خطرناک بیکٹیریا ختم ہوجاتے ہیں لہٰذا آپ کوچاہیے کہ دہی کھائیں۔

تحقیق سے پتہ چلا کہ جو انسان روزانہ صرف ایک پیالی دہی کھائے، اس کے منہ میں گندے مادوں سے جنم لینے والی بدبوپیدا نہیں ہوتی۔ وجہ یہ کہ دہی میں ملنے والے انسان دوست جراثیم ان مادوں کا خاتمہ کر ڈالتے ہیں۔ یاد رہے، چینی میں دہی ملا کر کھانے سے الٹا نقصان ہوتا ہے۔

منہ اور سانسوں کی بدبو کے خاتمے کے لیے آپ درج ذیل طریقے بھی اپنا سکتے ہیں۔

  • لونگ، سونف، چھوٹی الائچی، پودینے کے ذائقے کی میٹھی گولیاں اور دھنیا وغیرہ منہ کی بدبو دور کرتے ہیں۔ منہ کی ناخوشگوار بدبو کے خاتمے کے لیے صرف چند ٹکڑے دار چینی یا الائچی منہ میں رکھ لیں اور چباتے رہیں۔ اس سے نہ صرف منہ سے بدبو ختم ہوگی بلکہ ایک عجب سی مہک کا احساس بھی ہوگا۔
  • بعض لوگ اپنے منہ کی بدبو کا جتنا مرضی علاج کروا لیں، بدبو جاتی ہی نہیں ہے۔کیونکہ بدبو کی وجہ معدے کی خرابی ہوتی ہے۔ ایسے لوگوں کو پہلے اپنے معدے کا علاج کرنا چاہیئے۔ ایسی تمام چیزوں سے پر ہیز کرنا چاہیئے جو معدہ کی خرابی کا باعث بنتی ہیں۔ ان میں زیادہ تر تلی ہوئی اور زیادہ مصالہ دار چیزوں سے پرہیز کرنا چاہیے۔
  • بدبو دور کرنے کے لیے تلسی کے پتے پانی میں ابال کر چھان لیں ، ٹھنڈا ہونے پر اس پانی کے غرارے کریں، تلسی کے پتوں میں جراثیم کو ختم کرنے کی صلاحیت ہوتی ہے۔
  • میٹھے سوڈے کا استعمال منہ کو ترو تازہ رکھنے کے لیے نہایت فائدہ مند ہے۔ سوڈا نہ صرف منہ کی تیزابیت کو کم کرتا ہے بلکہ منہ میں بیکٹیریا کی نشوونما کو بھی روکنے میں مدد دیتا ہے۔ تھوڑی سی مقدار میں سوڈا لے کر اس سے دانتوں کو برش کریں یا پھر میٹھے سوڈے اور ہائیڈروجن پرآکسائیڈ کا پیسٹ بنالیں لیکن اس بات کا خیال رکھیں کہ ہائیڈروجن پر آکسائیڈ کے ایک چمچ میں دو چمچ پانی شامل کرکے استعمال کریں تاکہ دانتوں پرا س کے سخت اثرات مرتب نہ ہوں۔
  • پودینہ کا استعمال منہ کی بدبو کے خاتمے کا نہایت موثر ذریعہ ہے، آپ نے اکثر مختلف ٹوتھ پیسٹ کے اشتہارات میں بھی اس کا ذکر سنا ہوگا، تو اگر آپ منہ کی بدبو سے نجات حاصل کرنا چاہتے ہیں تو کھانے میں پودینہ کے استعمال کو بڑھائیں۔
  • بے شمار خصوصیات کی حامل سونف نظام ہاضمہ کو بہتر بنانے کے ساتھ ساتھ منہ کی بدبو کو بھی ختم کرنے میں مدد دیتی ہے۔ پورے دن میں کم ازکم ایک یا آدھا چائے کا چمچ سونف ضرور چبائیں۔ اس کے علاوہ سونف سے بنی ہوئی چائے کو ماؤتھ فریشنر کے طورپر بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔
  • نیم کے دس بارہ پتے ایک گلاس پانی میں اچھی طرح ابال کر چھان لیں، پانی ٹھنڈا اور قابل برداشت ہوجائے تو اس پانی سے غرارے کریں۔ اس سے نہ صرف منہ کی بدبو کا خاتمہ ہو گا بلکہ منہ کی جلن ، درد اور مسوڑھوں سے خون آنے کی شکایت بھی نہ رہے گی۔ اور بیکٹریا کا بھی خاتمہ ہو جائے گا۔
  • ماہرین کے مطابق دار چینی کی چائے منہ اور سانسوں کو مہکائے رکھتی ہے۔علاوہ ازیں میتھی کی چائے منہ کی ناخوشگوار بو کے لیے بہترین گھریلو نسخہ ہے۔ ایک چائے کا چمچ میتھی کے بیجوں کو ایک کپ پانی میں ڈال کر پانچ منٹ تک ابالیں جب بیج نرم پڑجائیں تو اسے پندرہ منٹ تک ٹھنڈا ہونے دیں پھر چھان کر اس پانی کو ماؤتھ واش کے طورپر استعمال کریں۔
  • رات کو منہ صاف کریں اور ادرک کا ایک انچ کا ٹکڑا منہ میں چبائیں اور کوشش کریں یہ رس ایک منٹ منہ میں رہے۔ اسکے بعد پانی نہ پیئں اور بس۔صبح دیکھیں کوئی بو نام کی چیز نہیں پائیں گے۔ اگر یہ عمل ہر کھانے کے بعد کرلیں تو تمام دن منہ کی بو آپکے قریب بھی نہیں بھٹکے گی اور آپکا پیٹ بھی کبھی خراب نہیں ہوگا۔
  • روزانہ نیم گرم پانی میں نمک ملا کر غرارے کریں یہ گلے کے غدودوں (گلینڈز) کے لیے بھی اچھا ہے ۔ اگر اس پانی میں لیموں بھی شامل کر لیا جائے تو یہ ایک قدرتی ماؤتھ واش بن جاتا ہے، جس سے منہ اور سانس کی بدبو مکمل طور پر ختم ہو جاتی ہے۔
  • کچے امرود کا استعمال منہ سے بدبو دور کرنے کے لیے بہترین ہے۔ امرود میں حیرت انگیز اجزا فاسفورس ایسڈ، کیلشیم اور میگنیز شامل ہوتے ہیں اس لیے امرود کو چبانا دانتوں اور مسوڑھوں کے لیے شاندار ٹانک کا کام دیتا ہے یہ نہ صرف مسوڑھوں سے خون رسنے کوروکتا ہے بلکہ سانس کی ناخوشگوار بو کوبھی ختم کردیتا ہے ۔امرود کی نرم اورتازہ پتیاں چبانے سے منہ کی بدبو ختم ہوجاتی ہے۔
  • شکر کے بغیر چیونگم چبانا بھی اچھی چیز ہے۔چیونگم منہ میں لعاب دہن کوتحریک دیتا ہے۔بگیر شکر کے گم سے دانتوں کے درمیان خلا پیدا ہونے کی روک تھام ہوتی ہے جوجراثیم کی پناہ گاہیں بھی ہوتی ہیں۔میٹھی چیونگم چبانے سے گریز کریں کیونکہ اس میں شامل کوئی بھی فلیور صرف عارضی ذائقے کے لیے ہوتا ہے۔
  • منہ کو تروتازہ اوربدبو سے پاک رکھنے کے لیے لیموں کا استعمال بے حد مفید ہے۔ آدھا لیموں لیں اوراسے آہستگی کے ساتھ دانتوں اور مسوڑھوں پر رگڑیں۔ لیموں میں پایا جانے والا طاقتور جز وٹامن سی منہ کے اندرونی ریشوں کو سکیڑ کر ان سے زہریلے عناصر کو باہر نکال دیتا ہے جن سے دانت اورمسوڑھے مضبوط ہوتے ہیں۔

اس مضمون سے متعلقہ اگر کوئی چیز آپ کی سمجھ میں نہیں آئی ہے یا آپ اس تحریر کے حوالہ سے مزید معلومات حاصل کرنا چاہتے ہیں تو آپ ہمیں کمنٹس کر سکتے ہیں۔ آپ کے ہر سوال،ہر کمنٹس کا جواب دیا جائے گا۔ اگر آپ کو یہ تحریر اچھی لگی ہے تو آپ اسے سوشل میڈیا پر بھی شیئر کر سکتے ہیں۔ تاکہ آپ کے دوست احباب کی بھی بہتر طور پر راہنمائی ہو سکے۔

ضروری نوٹ: منہ کی بدبو سے متعلقہ یہ تحریرمحض معلومات عامہ کے لئے شائع کی جا رہی ہے۔ ان ترکیبوں ، طریقوں اور ٹوٹکوں پر عمل کرنے سےپہلے اپنے معالج ( طبیب،ڈاکٹر )سے مشورہ ضرور کریں۔ اور دوران عمل اپنے معالج سے رابطہ میں رہیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں